» » » Chehray pe mere zulf ko phelaoo kisi din....kia roz garajte ho baras jaoo kisi din... ♥

غزل
(امجد اسلام امجد)

چہرے پہ میرے زلف کو پھیلاؤ کسی دن
کیا روز گرجتے ہو برس جاؤ کسی دن

رازوں کی طرح اترو میرے دل میں کسی شب
دستک پہ میرے ہاتھ کی کھل جاؤ کسی دن

پیڑوں کی طرح حسن کی بارش میں نہالوں 
بادل کی طرح جھوم کے گھِر آؤ کسی دن

خوشبو کی طرح گزرو میرے دل کی گلی سے 
پھولوں کی طرح مجھ پہ بکھر جاؤ کسی دن 

پھر ہاتھ کو خیرات ملے بندِ قبا کی
پھر لطف شب وصل کو دھراؤ کسی دن

گزریں جو میرے گھر سے تو رک جائیں ستارے
اس طرح میری رات کو چمکاؤ کسی دن

میں اپنی ہر اک سانس اسی رات کو دے دوں 
سر رکھ کے میرے سینے پہ سو جاؤ کسی دن​

***

شیئرڈ بائی عادل چترالی



About News Desk

Hi there! I am the admin of this page, am not the author of the post. I am pleased to share this news with you; you can express your expression as comment in below comment area….this news’ copy right is reserved by the author/publisher mentioned there. Thanks
«
Next
Newer Post
»
Previous
Older Post

No comments:

Leave a Reply


فریش فریش خبرین اور ویڈیوز


Random Posts

Loading...