» » » Unhen sahar ki tamanna na roz-e-roshan ki.... read full >>

فیض کی زمین میں چند اشعار 

اُنہیں سحر کی تمنا نہ روزِ روشن کی
جو تیری زُلف کے سائے کو شام کہتے ہیں

ہر ایک رشک سے لیتا ہے پھر تو نام اُس کا
جسے وہ پیار سے اپنا غلام کہتے ہیں

وہ زخم جس سے ہے شاداب نالہِ ہستی
"وہیں ہے، دل کے قراین تمام کہتے ہیں"

وہ مہ رُخوں میں بھی یکتا ہے سو اُسے مہ رُخ
کمال رشک سے "ماہِ تمام" کہتے ہیں


About News Desk

Hi there! I am the admin of this page, am not the author of the post. I am pleased to share this news with you; you can express your expression as comment in below comment area….this news’ copy right is reserved by the author/publisher mentioned there. Thanks
«
Next
Newer Post
»
Previous
Older Post

No comments:

Leave a Reply


فریش فریش خبرین اور ویڈیوز


Random Posts

Loading...