» » » اتر چکے ہو سمندر میں حوصلہ رکھنا

اتر چکے ہو سمندر میں حوصلہ رکھنا
ہوا چلے نہ چلے بادباں کھلا رکھنا

کبھی نہ جلتے چراغوں کا سلسلہ ٹوٹے
جو ایک بجھنے لگے ساتھ دوسرا رکھنا

یہی کمال ہے بارش میں بھیگتے رہنا
اور اپنے جسم کی مٹی کو بھی بچا رکھنا

حدود ذات کے اندر نہ کوئی جھانک سکے
تعلقات میں اک ایسا فاصلہ رکھنا

کہیں پہ دونوں کنارے ضرور ملتے ہیں
بس اپنے آپ کو دریا میں تم بہا رکھنا

اقبال نوید





About News Desk

Hi there! I am the admin of this page, am not the author of the post. I am pleased to share this news with you; you can express your expression as comment in below comment area….this news’ copy right is reserved by the author/publisher mentioned there. Thanks
«
Next
Newer Post
»
Previous
Older Post

No comments:

Leave a Reply


فریش فریش خبرین اور ویڈیوز


Random Posts

Loading...