» » » خوبصورت شاعری : وہ جذبوں کی تجارت تھی یہ دل کچھ اور سمجھا تھا​

وہ جذبوں کی تجارت تھی یہ دل کچھ اور سمجھا تھا​
اسے ہنسنے کی عادت تھی یہ دل کچھ اور سمجھا تھا​

مجھے اس نے کہا آؤ نئی دنیا بساتے ہیں​
اسے سوجھی شرارت تھی یہ دل کچھ اور سمجھا تھا​

ہمیشہ اسکی آنکھوں میں دھنک سے رنگ ہوتے تھے​
یہ اسکی عام حالت تھی یہ دل کچھ اور سمجھا تھا​

وہ میرے پاس بیٹھا دیر تک غزلیں میری سنتا​
اسے خود سے محبت تھی یہ دل کچھ اور سمجھا تھا​

میرے کاندھے پہ سر رکھ کے کہیں پہ کھو گیا تھا وہ​
یہ اک وقتی عنائیت تھی ، یہ دل کچھ اور سمجھا تھا​





About Admin

Hi there! I am the admin of this page, am not the author of the post. I am pleased to share this news with you; you can express your expression as comment in below comment area….this news’ copy right is reserved by the author/publisher mentioned there. Thanks
«
Next
Newer Post
»
Previous
Older Post

No comments:

Leave a Reply


فریش فریش خبرین اور ویڈیوز


Random Posts

Loading...