» » » منور رانا کی شاعری : ہنسنا بھی آسان نہیں ہے، لب زخمی ہو جاتے ہیں

رونے میں اک خطرہ ہے، تالاب، ندی ہو جاتے ہیں
ہنسنا بھی آسان نہیں ہے، لب زخمی ہو جاتے ہیں

اسٹیشن سے واپس آ کر بوڑھی آنکھیں سوچتی ہیں
پتے دیہاتی ہوتے ہیں، پھل شہری ہو جاتے ہیں

گاؤں کے بھولے بھالے باسی، آج تلک یہ کہتے ہیں
ہم تو نہ لیں گے جان کسی کی، رام دکھی ہو جاتے ہیں

سب سے ہنس کر ملیے جلئے، لیکن اتنا دھیان رہے
سب سے ہنس کر ملنے والے، رسوا بھی ہو جاتے ہیں

اپنی انا کو بیچ کے اکثر لقمۂ تر کی چاہت میں
کیسے کیسے سچے شاعر درباری ہو جاتے ہیں


منور رانا کی شاعری






About Admin

Hi there! I am the admin of this page, am not the author of the post. I am pleased to share this news with you; you can express your expression as comment in below comment area….this news’ copy right is reserved by the author/publisher mentioned there. Thanks
«
Next
Newer Post
»
Previous
Older Post

No comments:

Leave a Reply


فریش فریش خبرین اور ویڈیوز


Random Posts

Loading...