» » » » حبیب جالب شاعری : یہ سوچ کر نہ مائلِ فریاد ہم ہوئے

یہ سوچ کر نہ مائلِ فریاد ہم ہوئے 
آباد کب ہوئے تے کہ برباد ہم ہوئے

ہوتا ہے شاد کام یہاں کون با ضمیر
ناشاد ہم ہوے تو بہت شاد ہم ہوئے

پرویز کے جلال سے ٹکرانے ہم بھی ہیں 
یہ اور بات ہے کہ نہ فرہاد ہم ہوئے

کچھ ایسے بھا گئے ہمیں دنیا کے رنج و غم
کوے بتاں میں بھولی ہوئ یاد ہم ہوئے

جالب تمام عمر ہمیں یہ گماں رہا
اس زلف کے خیال سے آزاد ہم ہوئے 





About Admin

Hi there! I am the admin of this page, am not the author of the post. I am pleased to share this news with you; you can express your expression as comment in below comment area….this news’ copy right is reserved by the author/publisher mentioned there. Thanks
«
Next
Newer Post
»
Previous
Older Post

No comments:

Leave a Reply


فریش فریش خبرین اور ویڈیوز


Random Posts

Loading...