Express ☺ your view, expression on this post, via Facebook comment in the below box… (do not forget to tick Also post on facebook option)

Showing posts with label ShiroShairi. Show all posts
Showing posts with label ShiroShairi. Show all posts

Saturday, May 25, 2019

کِس جانِ گُلِستاں سے یہ ملِنے کی گھڑی تھی

کِس جانِ گُلِستاں سے یہ ملِنے کی گھڑی تھی

دُنیا کو تو حالات سے اُمّید بڑی تھی
پر چاہنے والوں کو جُدائی کی پڑی تھی..!!

کِس جانِ گُلِستاں سے یہ ملِنے کی گھڑی تھی
خوشبوُ میں نہائی ہُوئی اِک شام کھڑی تھی....!!

میں اُس سے ملی تھی کہ خُود اپنے سے مِلی تھی
وہ جیسے مِری ذات کی گُم گشتہ کڑی تھی.......!!

یُوں دیکھنا اُس کو کہ کوئی اور نہ دیکھے 
انعام تو اچّھا تھا ، مگر شرط کڑی تھی....!!

کم مایہ تو ہم تھے مگر احساس نہ ہوتا 
آمد تِری اِس گھر کے مُقدّر سے بڑی تھی...!!

میں ڈھال لیے سمتِ عدُو دیکھ رہی تھی 
پلٹی ، تو مِری پُشت پہ تلوار گڑی تھی...!!

پروین شاکر




Friday, May 17, 2019

اردو شاعری :فقط یہی نہیں ہوا کہ فیصلہ بدل گیا

اردو شاعری :فقط یہی نہیں ہوا کہ فیصلہ بدل گیا

فقط یہی نہیں ہوا کہ فیصلہ بدل گیا
دلیل کارگر ہوئی تو ضابطہ بدل گیا
مرا رفیق بن گیا فریق ساتھ چھوڑ کر
مسل وہیں دھری رہی مقدمہ بدل گیا
گلی تو اس کی ڈھونڈ لی تھی شہرِ بے لحاظ میں
مگر گواہِ چشم دید کا پتا بدل گیا
وہی ہے مدعا مرا، وہی ہے بے رخی تری
ذرا زبان اور ہے، محاورہ بدل گیا
سوالِ وصلِ یار تشنہِ جواب ہے ابھی
جو ایک مہرباں ہوا تو دوسرا بدل گیا
وہی ہے راستہ مرا, وہی ہیں اس کے پیچ وخم
وہی ہے منزلِ مراد, قافلہ بدل گیا
شکست و فتح اک طرف, ثبات میں کمی نہیں
وہی محاذ آج بھی ہے مورچہ بدل گیا
رمل جفر پہ یاسر انحصار کس لیے کروں
نصیب خود ہی لکھ لیا تو زائچہ بدل گیا





Wednesday, March 27, 2019

احمد فرہاد کی زبردست اردو شاعری  پوری پڑھیں لنک پر : کافر ہوں، سر پھرا ہوں مجھے ماردیجیے

احمد فرہاد کی زبردست اردو شاعری پوری پڑھیں لنک پر : کافر ہوں، سر پھرا ہوں مجھے ماردیجیے

کافر ہوں، سر پھرا ہوں مجھے ماردیجیے
میں سوچنے لگاہوں مجھے مار د یجیے
ہے احترام ِحضرت ِانسان میرا دین
بے دین ہوگیا ہوں مجھے مار دیجیے
میں پوچھنےلگا ہوں سبب اپنےقتل کا
میں حد سے بڑھ گیا ہوں مجھے ماردیجیے
کرتا ہوں اہل جبہ ودستار سے سوال
گستاخ ہوگیا ہوں مجھے مار دیجیے
خوشبو سے میرا ربط ہے جگنو سے میرا کام
کتنا بھٹک گیا ہوں مجھے مار دیجیے
معلوم ہے مجھے کہ بڑا جرم ہے یہ کام
میں خواب دیکھتا ہوں مجھے ماردیجیے
زاہد یہ زہدو تقویٰ و پرہیز کی روش
میں خوب جانتا ہوں مجھے ماردیجیے
بے دین ہوں مگر ہیں زمانے میں جیتنے دین
میں سب کو مانتا ہوں مجھے مار دیجیے
پھر اس کے بعد شہر میں ناچے گا ہُو کا شور
میں آخری صدا ہوں مجھے مار دیجیے
میں ٹھیک سوچتاہوں، کوئی حد میرے لیے
میں صاف دیکھتا ہوں،مجھے مار دیجیے
یہ ظلم ہے کہ ظلم کو کہتا ہوں صاف ظلم
کیا ظلم کر رہا ہوں مجھے مار دیجیے
میں عشق ہوں،میں امن ہوں میں علم ہوں میں خواب
اک درد لادوا ہوں مجھے مار دیجیے
زندہ رہا تو کرتا رہوں گا ہمیشہ پیار
میں صاف کہہ رہا ہوں مجھے مار دیجیے
جو زخم بانٹتے ہیں انہیں زیست پہ ہے حق
میں پھول بانٹا ہوں مجھے مار دیجیے
ہے امن شریعت تو محبت مرا جہاد
باغی بہت بڑا ہوں مجھے مار دیجیے
بارود کا نہیں مرا مسلک درود ہے
میں خیر مانگتا ہوں مجھے مار دیجیے
(احمد فرہاد)





Tuesday, March 26, 2019

جولیا کی زبردست شاعری، پڑھیں مزہ آئے گا : نہ ہم رہے نہ وہ خوابوں کی زندگی ہی رہی

جولیا کی زبردست شاعری، پڑھیں مزہ آئے گا : نہ ہم رہے نہ وہ خوابوں کی زندگی ہی رہی

نہ ہم رہے نہ وہ خوابوں کی زندگی ہی رہی
گُماں ،گُماں سی مہک خود کو ڈھونڈتی ہی رہی
عجب طرح رخِ آئندگی کا رنگ اُڑھا
دیارِ ذات میں از خود گزشتگی ہی رہی
حریم شوق کا عالم بتائیں کیا تم کو
حریمِ شوق میں بس شوق کی کمی رہی
پاسِ نگاہِ تغافل تھی اک نگاہ کہ رہی تھی
جو دل کے چہرۂ حسرت کی تازگی ہی رہی
بدل گیا سب ہی کچھ اس دیارِ بُودش میں
گلی تھی جو مری جان وہ تری گلی ہی رہی
تمام دل کے محلے اُجڑ چکے تھے مگر
بہت دنوں تو ہنسی ہی رہی، خوشی ہی رہی
وہ داستان تمھیں اب بھی یاد ہے کہ نہیں
جو خون تھوکنے والوں کی بے حسی ہی رہی
سناؤں میں کسے افسانۂ خیالِ ملال
تری کمی ہی رہی اور مری کمی ہی رہی

جون ایلیا 





Thursday, January 31, 2019

وہ سرہانے کتاب رکھتے ہیں - یہ خوبصورت شاعری ضرور پڑھیں

وہ سرہانے کتاب رکھتے ہیں - یہ خوبصورت شاعری ضرور پڑھیں

وہ سرہانے کتاب رکھتے ہیں
جانے کیا کیا حساب رکھتے ہیں

جاگ کر جو گزارتے ہیں رات
وہ بھی آنکھوں میں خواب رکھتے ہیں
میری تربت پہ باوفا قاتل
روز تازہ گلاب رکھتے ہیں

دل کش ان کی ہیں بے حجاب آنکھیں
وہ جو رخ پر نقاب رکھتے ہیں

پر شکستہ صحیح، سینے میں
دل تو ہم بھی جناب رکھتے ہیں

وہ بھی اہلِ وفا ہیں جو اب تک؟
فہمِ عیب و صواب رکھتے ہیں

کیسے تنگ دل ہیں میکدے کے لوگ
برتنوں میں شراب رکھتے ہیں

ضبط کی ریت میں دبے آنسو
بے بسی کا عذاب رکھتے ہیں

قلبِ مردہ پہ خون کے دھبے
جانے کیا اضطراب رکھتے ہیں؟

ہم اکیلے سفر نہیں کرتے
رنج کو ہم رکاب رکھتے ہیں

فلسفیؔ تیرے شہر کے عاشق
خود کو زیرِ عتاب رکھتے ہیں​

فلسفی





میرے فن کار!!  مجھے خوب تراشا تو نے   آنکھ نیلم کی  - یہ خوبصورت شاعری پڑھنے کے لئے کلک کریں لنک پر

میرے فن کار!! مجھے خوب تراشا تو نے آنکھ نیلم کی - یہ خوبصورت شاعری پڑھنے کے لئے کلک کریں لنک پر

میرے فن کار!!
مجھے خوب تراشا تو نے 
آنکھ نیلم کی 
بدن چاندی کا 
یاقوت کے لب 

یہ ترے 
ذوق طلب کے بھی ہیں 
معیار عجب 
پاؤں میں میرے 
یہ پازیب 

سجا دی تو نے 
نقرئی تار میں آواز منڈھا دی تو نے 
یہ جواہر سے جڑی 
قیمتی مورت میری 

اپنے سامان تعیش میں لگا دی تو نے 
میں نے مانا 
کہ حسیں ہے ترا شہکار 
مگر 
تیرے شہکار میں 

مجھ جیسی کوئی بات نہیں 
تجھ کو نیلم سی 
نظر آتی ہیں آنکھیں میری 
درد کے ان میں سمندر 
نہیں دیکھے تو نے 

تو نے 
جب کی 
لب و رخسار کی خطاطی کی 
جو ورق لکھے تھے 
دل پر 
نہیں دیکھے تو نے 
میرے فن کار 
ترے ذوق 

ترے فن کا کمال 
میرے پندار کی قیمت 
نہ چکا پائے گا 
تو نے بت یا تو تراشے 

یا تراشے ہیں خدا 
تو بھلا کیا مری تصویر 
بنا پائے گا 
تیرے اوراق سے 
یہ شکل مٹانی ہوگی 

اپنی تصویر 
مجھے آپ بنانی ہوگی 
ہوش بھی 
جرأت گفتار بھی 

بینائی بھی 
جرأت عشق بھی ہے 
ضبط کی رعنائی بھی 
جتنے جوہر ہیں نمو کے 
مری تعمیر میں ہیں 

دیکھ یہ رنگ 
جو تازہ مری تصویر میں ہیں 






Friday, January 11, 2019

ﺣُﺴﻦِ ﺩﯾﺪﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ....!!

ﺣُﺴﻦِ ﺩﯾﺪﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ....!!

ﺣُﺴﻦِ ﺩﯾﺪﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ....!!
ﻧﻮﺭ ﺍﻟﺒﺼﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﮐﯿﺴﯽ ﻋﯿّﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﮐﯿﺴﯽ ﻣﮑّﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﮐﯿﺴﯽ ﺧﻮﻧﺨﻮﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺗﯿﺰ ﺗﻠﻮﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!

ﻟﻮﭦ ﻟﯿﺘﯽ ﮨﯿﮟ ﯾﮧ ﻏﺎﻓﻞ ﭘﺎ ﮐﺮ،
ﮐﯿﺴﯽ ﮨُﺸﯿﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﻧﻘﺪ ﺟﺎﮞ ﻟﯿﮑﮯ ﭘﻼﺗﯽ ﮨﯿﮟ ﺷﺮﺍﺏ،
ﮐﯿﺴﯽ ﺧُﻤّﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﻣﯿﮟ ﮨﻮﮞ ﺑﯿﺪﻝ، ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ ﺩﻟﺒﺮ،
ﮐﯿﺴﯽ ﺩﻟﺪﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺧﻮﺍﺏ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﻧﮧ ﻣِﻠﯿﮟ ﻋﺎﺷﻖ ﺳﮯ،

ﮐﯿﺴﯽ ﺑﯿﺪﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!

ﻭﺍﺭ ﻭﮦ ﮐﺮ ﮐﮯ ﻣُﮑﺮ ﺟﺎﺗﯽ ﮨﯿﮟ،
ﮐﯿﺴﯽ ﻣﮑّﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺩﻝ ﺑﻨﺎ ﮨﮯ ﮨﺪﻑِ ﺗﯿﺮِ ﻧِﮕﺎﮦ،
ﮐﯿﺴﯽ ﮐﻤﺎﻧﺪﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﮐﯿﺴﯽ ﺑﮯ ﺭﺣﻢ ﮨﯿﮟ ﮐﯿﺴﯽ ﺑﯿﺒﺎﮎ،
ﮐﯿﺴﯽ ﺟﮕﺮﺩﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﻣﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ،
ﻋﮑﺲ ﺑﺮﺩﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!

ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ ﮨﯿﮟ ﻣﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ۔ !!
ﺩﻭ ﮨﯿﮟ ﯾﺎ ﭼﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﮔﺮ ﮔُﻨﮩﮕﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ ﻣﯿﺮﯼ،
ﭘﮭﺮ ﺳﯿﮧ ﮐﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺧﻨﺠﺮ ﻭ ﻧﺸﺘﺮ ﻭ ﭘﯿﮑﺎﮞ ﻭ ﺧﺪﻧﮓ،
ﺍﻭﺭ ﺗﻠﻮﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺩﻟﺮﺑﺎ ﻭ ﺩﻟﺒﺮ ﻭ ﺩﻟﮑﺶ ﻭ ﺩﻟﺠﻮ،
ﺍﻭﺭ ﺩﻟﺪﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﻣﺴﺖ ﻭ ﺑﺪﻣﺴﺖ ﻭ ﺳﯿﮧ ﻣﺴﺖ ﺑﻨﯿﮟ،
ﺟﺐ ﺳﮯ ﻣﯿﺨﻮﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!

ﭘﮭﻮﭦ ﺟﺎﺋﯿﮟ ﻣﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ ﯾﺎﺭﺏ،
ﻣُﺠﮫ ﺳﮯ ﺑﯿﺰﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﻧﺎﺗﻮﺍﮞ ﻣﯿﮟ ﮨﻮﮞ ﺗﻮ ﻭﮦ ﮨﯿﮟ ﺑﯿﻤﺎﺭ،
ﻣﯿﺮﯼ ﻏﻤﺨﻮﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺍﭘﻨﮯ ﭘﺮﺩﮮ ﻣﯿﮟ ﻣﯿﺮﮮ ﺩُﺷﻤﻦ ﮐﯽ،
ﮐﯿﻮﮞ ﻃﺮﻓﺪﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺟﺎﻧﭽﺘﯽ ﮐﯿﻮﮞ ﮨﯿﮟ ﻣﺘﺎﻉِ ﺩﻝ ﮐﻮ۔؟؟
ﮐﯿﺎ ﺧﺮﯾﺪﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!

ﮨﺎﮞ۔۔۔۔۔ ﺗﺠﻠّﯽ ﺳﮯ ﻣﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﭘﺮ،

ﺑﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺑﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺁﺋﯿﻨﮧ ﺩﯾﮑﮫ ﻣﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﺳﮯ،
ﻣﺤﺾ ﺑﯿﮑﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺣُﺴﻦ ﮐﯽ ﻧﺎﮎ ﮨﯿﮟ، ﭼﺸﻢِ ﺑﺪﺩﻭﺭ،
ﮐﯿﺎ ﻣﯿﺮﮮ ﯾﺎﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔ !!
ﺗﮭﺎﻡ ﮐﺮ ﺩﻝ ﮐﻮ ﯾﮧ ﮐﮩﺘﺎ ﮨﮯ ﻭﻻؔ،
ﮐﯿﺎ ﺩﻝِ ﺁﺯﺍﺭ ﮨﯿﮟ ﺗﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ۔






Friday, December 28, 2018

بجٹ میں نے دیکھے ہیں سارے تر ے : مزاحیہ شاعری  #مزاحیات

بجٹ میں نے دیکھے ہیں سارے تر ے : مزاحیہ شاعری #مزاحیات

بجٹ میں نے دیکھے ہیں سارے تر ے
انوکھے انوکھے خسارے تر ے

اللے تللے اُدھارے تر ے 
بھلا کون قرضے اُتارے تر ے

گرانی کی سوغات حاصل مرا
محاصل تر ے ، گوشوار ے تر ے

مشیروں کا جمگھٹ سلامت رھے
بہت کام جس نے سوانر ے تر ے

مری سادہ لوحی سمجھتی نہیں
حسابی کتابی اشار ے تر ے

کئ اصطلاحوں میں گوندھے ہوئے
کنائے تر ے ، استعارے تر ے

تو اربوں کی کھربوں کی باتیں کرے
عدد کون اتنے شمارے تر ے

تجھے کچھ غریبوں کی پرواہ نہیں
وڈیرے ھیں پیارے ، دلارے تر ے

اِدھر سے لیا کچھ اُدھر سے لیا
یونہی چل رہے ہیں ادارے تر ے

شاعر نا معلوم






Tuesday, December 11, 2018

بہت ہی خوبصورت شاعری :  سامنے اس کے کبھی اس کی ستائش نہیں کی

بہت ہی خوبصورت شاعری : سامنے اس کے کبھی اس کی ستائش نہیں کی

سامنے اس کے کبھی اس کی ستائش نہیں کی
دل نے چاہا بھی اگر، ہونٹوں نے جنبش نہیں کی

اہلِ محفل پہ کب احوال کھلا ہے اپنا
ہم بھی خاموش رہے اس نے بھی پُرسش نہیں کی

جس قدر اس سے تعلق تھا چلا جاتا ہے
اس کا کیا رنج کہ جس کی کبھی خواہش نہیں کی

یہ بھی کیا کم ہے کہ دونوں کا بھرم قائم ہے
اس نے بخشش نہیں کی ہم نے گزارش نہیں کی

اک تو ہم کو ادب آداب نے پیاسا رکھا
اس پہ محفل میں صراحی نے بھی گردش نہیں کی

ہم کہ دکھ اوڑھ کے خلوت میں پڑے رہتے ہیں
ہم نے بازار میں زخموں کی نمائش نہیں کی

اے مرے ابرِ کرم دیکھ یہ ویرانۂ جاں
کیا کسی دشت پہ تو نے کبھی بارش نہیں کی

کٹ مرے اپنے قبیلے کی حفاظت کے لیے
مقتلِ شہر میں ٹھہرے رہے جنبش نہیں کی

وہ ہمیں بھول گیا ہو تو عجب کیا ہے فراز
ہم نے بھی میل ملاقات کی کوشش نہیں کی






Monday, September 24, 2018

اسے ضرور پڑھیں:  ہم مرگئے تو سب کو دفنانے کی فکر ہوگی

اسے ضرور پڑھیں: ہم مرگئے تو سب کو دفنانے کی فکر ہوگی

ہم مرگئے تو سب کو دفنانے کی فکر ہوگی
کسی کو قبر کی تو کسی لے جانے کی فکر ہوگی

میرا نام پکارا جائے گا مسجد کے مناروں میں 
کہیں دیر نہ ہو جائے جنارے کی فکر ہوگی

پہلے روتے تھے میرے مرنے کے افسوس میں 
ہم چلے گئے تو ان کو کھانے کی فکر ہوگی

جوں ہی شام ہوگی پریشانی بڑھ جائے گی
کتنے مہمان آگئے سلانے کی فکر ہو گی

پھپکے چاول بنائیں گے سب گوشت بنائیں گے
سب کو برادری میں عزت بنانے کی فکر ہوگی




Tuesday, September 18, 2018

آئینہ بھی ۔۔ آئینے میں منظر بھی اُسی کا

آئینہ بھی ۔۔ آئینے میں منظر بھی اُسی کا


 قمرؔ سنبھلی 

آئینہ بھی ۔۔ آئینے میں منظر بھی اُسی کا
ہے آنکھ کی پُتلی میں ۔۔ سمندر بھی اُسی کا

تاریکیٔ شب ۔۔ صبح کا منظر ۔۔ بھی اُسی کا
یہ لشکرِ ۔۔ مہر و مہ و اختر ۔۔۔ بھی اُسی کا

جب چاہے فلک سر سے زمیں پاؤں سے چھینے
چادر بھی اُسی کی ہے ۔۔ یہ بستر بھی اُسی کا

مستور خزانے ہیں ۔۔ سمندر میں اُسی کے
نکلے جو صدف سے وہ ہے گوہربھی اُسی کا

دیکھیں تو کہیں کوئی مکاں اُس کا نہیں ہے
ڈھونڈیں تو ہر اک دل میں ملے گھر بھی اُسی کا

طوفاں میں کرے غرق کہ ساحل سے لگائے
کشتی بھی اُسی کی ہے ۔۔ سمندر بھی اُسی کا

سب مال و متاع اپنے حوالے ہیں اُسی کے
یہ دل بھی اُسی کا ہے ، مرا سر بھی اُسی کا

ہاتھوں میں اُسی کے ہیں دو عالم کی طنابیں
یہ دورِ زماں ، عرصۂ محشر ۔۔۔ بھی اُسی کا 

ایمان قمرؔ ظاہر و باطن پہ ہے میرا
اندر بھی اُسی کا مرا باہر بھی اُسی کا



Monday, September 3, 2018

اب کے ہم بچھڑے تو شاید کبھی خوابوں میں ملیں ـ احمد فراز صاحب کی خوبصورت غزل پڑھنے کے لئے کلک کریں

اب کے ہم بچھڑے تو شاید کبھی خوابوں میں ملیں ـ احمد فراز صاحب کی خوبصورت غزل پڑھنے کے لئے کلک کریں

اب کے ہم بچھڑے تو شاید کبھی خوابوں میں ملیں
جس طرح سوکھے ہوئے پھول کتابوں میں ملیں

ڈھونڈ اجڑے ہوئے لوگوں میں وفا کے موتی
یہ خزانے تجھے ممکن ہے خرابوں میں ملیں

غمِ دنیا بھی غمِ ےار میں شامل کر لو
نشّہ بڑھتا ہے شرابیں جب شرابوں میں ملیں

تُو خدا ہے نہ مرا عشق فرشتوں جیسا!
دونوں انساں ہیں تو کیوں اتنے حجابوں میں ملیں

آج ہم دار پہ ہم کھینچے گئے جن باتوں پر
کیا عجب کل وہ زمانے کو نصابوں میں ملیں

اب نہ وہ میں نہ وہ تو ہے نہ وہ ماضی ہے فراز
جیسے دو شخّص تمنا کے سرابوں میں ملیں

(احمد فراز)






Wednesday, August 29, 2018

ہے جسم و جاں کو ڈس رہا یہ سلسلہ سکوت کا  حضور آپ چپ کھڑے ہیں کیوں؟ لبوں کو کھولیے!  |  یہ خوبصورت شاعری لنک پر پوری پڑھیں

ہے جسم و جاں کو ڈس رہا یہ سلسلہ سکوت کا حضور آپ چپ کھڑے ہیں کیوں؟ لبوں کو کھولیے! | یہ خوبصورت شاعری لنک پر پوری پڑھیں

پھٹے ہوئے لباس سے تو شخصیت نہ تولیے 
خدا کا خوف کھائیے ، نہ بد کسی کو بولیے  

کوئی دلیل معتبر نہیں ہے عشق سامنے 
محبتوں کی جھیل میں یوں زہر تو نہ گھولیے  

اداس ہے نظر تو روح میں بھی اک فشار ہے 
اجڑ چکے بہت ہمیں مزید تو نہ رولیے  

ہے جسم و جاں کو ڈس رہا یہ سلسلہ سکوت کا 
حضور آپ چپ کھڑے ہیں کیوں؟ لبوں کو کھولیے!  

یہ کیا کہ رقصِ خامشی رہے ہمارے چار سُو 
ذرا سماعتوں میں رَس محبتوں کے گھولیے  

جو ڈس گئے، تو اب یہ اپنے آپ پر ملال ہے 
کہ پالتے رہے تھے آستیں میں ہم سپولیے  

دھیان اس کا اور ہی طرف تھا پھر بھی جانے کیوں 
وہ مجھ سے کہہ رہی تھی، جی میں سن رہی ہوں بولیے




کیونکہ جب عیب نکل جائیں، ہنر بچتا ہے :  یہ خوبصورت #شاعری لنک پر پوری پڑھیں

کیونکہ جب عیب نکل جائیں، ہنر بچتا ہے : یہ خوبصورت #شاعری لنک پر پوری پڑھیں

جب خزاں آئے تو پتے نہ ثمر بچتا ہے
خالی جھولی لیے ویران شجر بچتا ہے

نکتہ چیں! شوق سے دن رات مرے عیب نکال
کیونکہ جب عیب نکل جائیں، ہنر بچتا ہے

سارے ڈر بس اسی ڈر سے ہیں کہ کھو جائے نہ یار
یار کھو جائے تو پھر کون سا ڈر بچتا ہے

روز پتھراؤ بہت کرتے ہیں دنیا والے
روز مر مر کے مرا خواب نگر بچتا ہے

غم وہ رستہ ہے کہ شب بھر اسے طے کرنے کے بعد
صبحدم دیکھیں تو اتنا ہی سفر بچتا ہے

بس یہی سوچ کے آیا ہوں تری چوکھٹ پر
دربدر ہونے کے بعد اک یہی در بچتا ہے

اب مرے عیب زدہ شہر کے شر سے صاحب!
شاذ و نادر ہی کوئی اہل ہنر بچتا ہے

عشق وہ علم ریاضی ہے کہ جس میں فارس
دو سے جب ایک نکالیں تو صفر بچتا ہے




Tuesday, August 21, 2018

میکدے بند کریں لاکھ  زمانے والے :  شہر میں کم نہیں آنکھوں سے پلانے والے

میکدے بند کریں لاکھ زمانے والے : شہر میں کم نہیں آنکھوں سے پلانے والے

میکدے بند کریں لاکھ  زمانے والے
شہر میں کم نہیں آنکھوں سے پلانے والے

ہم سے ۔۔ دنیا میں نہیں ۔۔ ناز اٹھانے والے
لَوٹ آ ، بہرِ خدا روٹھ کے جانے والے

بات دبنے کی نہیں ۔۔ اور بھی شک پھیلے گا
میرے خط پھاڑ کے چولہے میں جلانے والے

نہ میں سقراط ، نہ عیسیٰ نہ علی ہوں نہ حسین
کیوں مرے خون کے پیاسے ہیں زمانے والے

تیرے منہ پر نہیں کہتے یہ الگ بات ۔۔ مگر
تجھ کو قاتل تو سمجھتے ہیں زمانے والے

تجھ کو واعظ نہیں معلوم کہ ہوں کس کا غلام
جا میاں ، جا مجھے دوزخ سے ڈرانے والے


شب کو پی صبح کو قرآن سنانے بیٹھے
کیفؔ صاحب ہیں عجب ڈھونگ رچانے والے

کیف بھوپالی






Monday, August 20, 2018

یہ شاعری پوری پڑھنے کے لئے لنک پر جائیے

یہ شاعری پوری پڑھنے کے لئے لنک پر جائیے

ہم کو نہیں قبول کسی طور بھی رقیب
نفرت بھی کیجئے تو فقط ہم سے کیجئے..


یہ شاعری پوری پڑھنے کے لئے لنک پر جائیے





لدی ہے پھولوں سے پھر بھی اداس لگتی ہے : یہ شاعری پوری پڑھنے کے لئے لنک پر جائیے

لدی ہے پھولوں سے پھر بھی اداس لگتی ہے : یہ شاعری پوری پڑھنے کے لئے لنک پر جائیے

لدی ہے پھولوں سے پھر بھی اداس لگتی ہے
یہ شاخ مجھ کو مری غم شناس لگتی ہے 

کسی کتاب کے اندر دبی ہوئی تتلی 
اُسی کتاب کا اک اقتباس لگتی ہے

وہ موت ہی ہے جو دیتی ہے سو طرح کے لباس 
یہ زندگی ہے کہ جو بے لباس لگتی ہے

تھی قہقہوں کی تمنا تو آ گئے آنسو 
خوشی کی آرزو غم کی اساس لگتی ہے

اٹھا کے دیکھ سرابوں کے آئینے کو ذرا 
ندی کے پاس بھلا کس کو پیاس لگتی ہے




Thursday, August 2, 2018

خوبصورت اردو شاعری :  وہ جو ٹل جاتی رہی سر سے بلا شام کے بعد

خوبصورت اردو شاعری : وہ جو ٹل جاتی رہی سر سے بلا شام کے بعد

وہ جو ٹل جاتی رہی سر سے بلا شام کے بعد
کوئی تو تھا کہ جو دیتا تھا دعا شام کے بعد

ہم نے تنہائی سے پوچھا کہ ملو گی کب تک
اس نے بے چینی سے فوراً ہی کہا شام کے بعد

میں اگر خوش بھی رہوں پھر بھی میرے سینے میں
سوگواری روتی ہے میرے گھر میں سدا شام کے بعد

تم گئے ہو تو سیاہ رنگ کے کپڑے پہنے
پھرتی رہتی ہے میرے گھر قضا شام کے بعد

لوٹ آتی ہے میری شب کی عبادت خالی
جانے کس عرش پہ رہتا ہے خدا شام کے بعد

دن عجب مٹھی میں جکڑے ہوئے رکھتا ہے مجھے
مجھ کو اس بات کا احساس ہوا شام کے بعد

کوئی بھولا ہوا غم ہے جو مسلسل مجھ کو
دل کے پاتال سے دیتا ہے صدا شام کے بعد

مار دیتا ہے اجڑ جانے کا دہرا احساس
کاش ہو کوئی کسی سے نہ جدا شام کے بعد!.....





Monday, March 19, 2018

Urdu Joke - Beautiful Urdu poetry  ☺ ☺must share

Urdu Joke - Beautiful Urdu poetry ☺ ☺must share

Urdu Poetry - Beautiful Urdu poetry  ☺ ☺must share


 Joke, Santa Joke, Sardar Joke, Funny Jokes, Chitral, Chitrali Boni, Chitral Snow, Tourism Chitral, World News, Pakistan News, Khyber Pukhtunkha, Peshawar, Kalash, Kelash, Lotkhoh, PIA, Lahore, Pakistan, Pakistan Army, Taliban, Weather, Translate, Calculator, Horoscope, Donate, Donation, Bill Gates, Love Quote, Best Quotes, Quotes, Art, Clip Arts, Videos, Video, Joke, Urdu Joke, Funny Joke,






Thursday, March 15, 2018

خوبصورت اردو شاعری :  وہ لوگ ہی قدموں سے زمیں چھین رہے ہیں

خوبصورت اردو شاعری : وہ لوگ ہی قدموں سے زمیں چھین رہے ہیں

صحرا جو پُکاریں بھی تو سُن کر نہیں آتے
اب اہلِ جُنوں شہر سے باہر نہیں آتے

وہ کال پڑا ہے تجارت گاہِ دل میں
دستاریں تو میسر ہیں مگر سَر نہیں آتے

وہ لوگ ہی قدموں سے زمیں چھین رہے ہیں
جو لوگ میرے قد کے بھی برابر نہیں آتے

اِک تم کہ تمہارے لیے میں بھی ؛ میری جان بھی
اِک میں کہ مجھے تم بھی میسر نہیں آتے

اِس شان سے لوٹے ہیں گنوا کر دل و جان ہم
اِس طَور تو ہارے ہوئے لشکر نہیں آتے

کوئی تو خبر لے میرے دشمنِ جان کی
کچھ دن سے میرے صحن میں پتھر نہیں آتے

دل بھی کوئی آسیب کی نگری ہے کہ”محسن”
جو اِس سے نکل جاتے ہیں مُڑ کر نہیں...





Follow us on social media to get instent updates....

|Twitter| |Facebook| |Pinterst| |Myvoicetv.com|
Example

Send your news/prs to us at myvoicetv.outlook.com..

Note: The views, comments and opinions expressed on this news story/article do not necessarily reflect the official policy or position of the management of the website. Companies, Political Parties, NGOs can send their PRs to us at myvoicetv@outlook.com

 
‎لطیفے اور شاعری‎
Facebook group · 8,142 members
Join Group
یہ گروپ آپ سب کے لئے ہے۔ پوسٹ کیجئے اور بحث کیجئے۔۔۔۔۔ اپنی آواز دوسروں تک پہنچائے۔۔۔اور ہاں گروپ کو بڑا کرنے کے لئے اپنے دوستوں کو بھی گروپ میں دعو...
 

All Categories

Aaj Kamran Khan ke Saath Aamir Liaquat Hussain Aapas ki Bat NajamSethi Abdul Qadir Hassan AchiBaatain Afghanistan Aga Khan University Hospital AirLineJobs Allama Iqbal America Amjad Islam Amjad Anjum Niaz Ansar Abbasi APP Aqwal Zareen Articles Ayat-e-Qurani Ayaz Amir Balochistan Balochistan Jobs Bank of Khyber Banking Best Quotes Biwi Jokes Blogger Tips Chaltay Chaltay by Shaheen Sehbai China Chitral Coca-Cola Coke Studio Columns CookingVideos Corporate News Corruption Crimes Dr Danish ARY Sawal Yeh Hai Dubai E-Books EBM Education Educational Jobs Emirates English #Quotes English Columns EnglishJokes Funny Photos Funny Talk Shows Funny Videos Gilgit-Baltistan Girls Videos Govt Jobs HabibJalibPoetry Hamid Mir Haroon Al-Rashid Hasb-e-Haal with Sohail Ahmed Hassan Nisar Hassan Nisar Meray Mutabaq Hazrat Ali AS Sayings HBL Health HikayatShaikhSaadi Hospital_Jobs Huawei Hum Sab Umeed Say Hain India Information Technology Insurance International News Islam Islamabad Islamic Videos JammuKashmir Javed Chaudhry Jazz Jirga with Salim Safi Jobs Jobs Available Jobs in Karachi Jobs in KPK Jobs in Pak Army Jobs_Sindh JobsInIslamabad Jokes Jubilee Insurance Kal Tak with Javed Chaudhry Karachi Kashmir KhabarNaak On Geo News Khanum Memorial Cancer Hospital Khara Sach With Mubashir Lucman Khyber Pakhtunkhwa Lahore Latest MobilePhones Lenovo LG Life Changing Stories LifeStyle Live With Dr. Shahid Masood Live with Talat Hussain Maulana Tariq Jameel MCB Bank Microsoft Mobilink Mujeed ur Rahman Shami Munir Ahmed Baloch Nasir Kazmi Nazir Naji News News Videos NGO Nokia North Korea Nusrat Javed Off The Record (Kashif Abbasi) Off The Record With Kashif Abbasi On The Front Kamran Shahid OPPO Orya Maqbool Jan Pakistan Pakistan Army Pakistan Super League Pashto Song Photos Poetry Political Videos Press Release Prime Time with Rana Mubashir PTCL Punjab Quetta Quotes Rauf Klasra Samsung Sar-e-Aam By Iqrar-ul-Hasan Sardar Jokes Saudi Arabia ShiroShairi Show Biz Sikander Hameed Lodhi Sindh Social Media Sohail Warriach Songs Sports News Stories Syria Takrar Express News Talat Hussain Talk Shows Technology Telecommunication Telenor To the point with Shahzeb Khanzada Tonight with Moeed Pirzada Turkey Tweets of the day Ufone University Jobs Urdu Ghazals Urdu News Urdu Poetry UrduLateefay Video Songs Videos ViVO Wardat SamaaTV WaridTel Wasi Shah Zong اردو خبریں
______________ ☺ _____________ _______________ ♥ ____________________
loading...